کبیر خان افغان کوچ کے عہدے سے مستعفی


تصویر کے کاپی رائٹ
AFP

Image caption

کبیر خان پاکستان کی جانب سے چار ٹیسٹ اور 10 ون ڈے انٹرنیشنل بھی کھیل چکے ہیں

پاکستان کے سابق ٹیسٹ کرکٹر کبیر خان نے افغانستان کی کرکٹ ٹیم کے کوچ کے عہدے سے استعفی دے دیا ہے۔

انھوں نے استعفی کی وجہ ذاتی مصروفیت بتائی ہے تاہم بتایا جاتا ہے کہ ان کے افغان کرکٹ حکام سے اختلافات پیدا ہوگئے تھے۔

یہ دوسرا موقع ہے جب انھوں نے کوچ کا عہدہ چھوڑا ہے۔

اس سے قبل انھوں نے اگست 2010 میں استعفیٰ دیا تھا جس کے بعد وہ متحدہ عرب امارات کی ٹیم کے کوچ رہے تاہم دسمبر 2011 میں انھوں نے دوبارہ افغانستان کی ٹیم کے کوچ کی ذمہ داری سنبھال لی تھی۔

40 سالہ کبیرخان کی موجودگی میں افغانستان کی کرکٹ ٹیم نے تیزی سے ترقی کی منازل طے کیں۔

یہ ٹیم آئی سی سی کی ڈویژن پانچ لیگ سے ہوتے ہوئے ون ڈے انٹرنیشنل کا استحقاق حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی۔

کبیر خان کی کوچنگ میں افغانستان نے آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کوالیفائر میں کامیابی حاصل کر کے سنہ 2010 کے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں کھیلنے کا اعزاز حاصل کیا جس کے بعد افغانستان کی ٹیم بین الاقوامی کرکٹ کا حصہ بن گئی۔

اس دوران اس نے 2012 اور 2014 کے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں بھی حصہ لیا۔

افغانستان کی ٹیم نے آئندہ سال آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں ہونے والے عالمی کپ کے لیے بھی کوالیفائی کیا ہے۔

یہ پہلا موقع ہوگا کہ افغانستان کی ٹیم عالمی کپ میں حصہ لے گی۔

کبیر خان پاکستان کی جانب سے چار ٹیسٹ اور 10 ون ڈے انٹرنیشنل بھی کھیل چکے ہیں۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *